واقعہ کا مقدمہ پاکستان میں کس کے خلاف درج ہو گیا ؟حیران کن خبر

نئی دہلی (ویب ڈیسک)بھارتی شہر جودھپور میں 11 پاکستانی ہندوؤں کے زندگی سے محروم ہونے کے پراسرار واقعہ کامقدمہ پاکستان میں درج کرلیا گیا ہے مقدمہ سندھ کے شہر شہداد پور کے تھانہ میں مقتول خاندان سے تعلق رکھنے والی شریمتی مکھنی بھیل کی مدعیت میں درج کیا گیا مقدمہ میں

ٹیررازم اور سنگین دفعات شامل کی گئی ہیں شہداد پور تھانہ میں بیٹی شریمتی مکھنی بھیل نے ایف آئی آر میں موقف اختیار کیا ہے کہ جان سے محروم ہونے والوں میں ان کے ماں باپ، بہن بھائی اور خاندان کے دیگر لوگ شامل ہیں انہوں نے بتایا کہ پورے خاندان کو راجستھان کے گاؤں لونا میں اگست 2020ء میں زندگی سے محروم کیا گیا ۔ مکھنی بھیل نے موقف اختیار کیا کہ آر ایس ایس کے کارکنوں اور بی جے پی کے کارندوں نے رات 3 بجے گھر میں داخل ہوکر 80 سالہ والد، 75 سالہ والدہ سمیت پورے خاندان کو ٹیکے لگا کر زندگی سے محروم کر دیا ۔مکھنی بھیل نے مطالبہ کیا کہ بھارت میں زندگی سے محروم کیے گئے ہندو پاکستانی تھے، ریاست پاکستان انہیں انصاف دلائے۔انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی پر عالمی عدالت انصاف سے رجوع کیا جائے اور آر ایس ایس اور بی جے پی کو ٹیرر گروپ قرار دیاجائے۔مکھنی بھیل نے یہ بھی بتایا کہ زندگی سے محروم کئے گئے پاکستانی ہندوؤں کا خاندان 2012ء میں روز گار کیلئے راجستھان گیا تھا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.